×

ایف اے ٹی ایف نے بازومروڑاہمیں راس آگیا کسی نے سوچابھی نہ تھاکہ ہمیں اتنافائدہ ہوگا ملکی معیشت میں انقلاب ،عوام کے لیے خوشی کی خبرآگئی

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )پاکستان کو2018میں ایف اے ٹی ایف کی گرے لسٹ میں ڈالاگیاجس کے بعد سے اب تک پاکستان اس لسٹ سے نکلنے کی کوشش کررہاہے۔پاکستان نہ صرف سفارتی محاذ پراپنامقدمہ لڑرہاہے دنیاکوبتانے کی کوشش کررہاہےکہ اس نے گرے لسٹ نے نکلنے کےلیے کیااقدامات کیے ہیں بلکہ اس حوالے

سے پاکستان نے بڑے پیمانے پراصلاحات کی ہیں۔پاکستان کادشمن اس کوگرے لسٹ سے بلیک میں لے جانے کے لیے سرتوڑ کوششیں کررہاہے۔لیکن وقت کیساتھ ساتھ اسے ناکامی کاسامناکرناپڑ رہاہے۔پاکستان کے مخالف ممالک نے اس سارے معاملے میں پاکستان کابازومروڑنےکی کوشش کی کہ پاکستان بلیک لسٹ میں چلاجائے مگرقدرت کوکچھ اورمنظورتھااوراس سارے معاملے میں پاکستان کواتنافائدہ پہنچنےجارہاہےکہ کسی نے اس کاگمان نہیں کیاتھا۔پاکستان کاسب سے بڑامسئلہ کرپشن اورکرپشن سے لوٹی گئی دولت کوٹھکانے لگانےکاتھاجوپہلے بہت آسان تھالیکن اب قومی خزانے کولوٹنے والوں کے خلا ف ایکشن لیاجارہاہے۔آئے روز ڈالرکی بڑھتی ہوئی قدر کی وجہ سے روپے پرپریشرپڑتاتھاجس کی وجہ سے اس کی قدر دن بدن کم ہوتی جارہی تھی ۔معیشت کی ڈاکومینٹیشن نہیں تھی ۔ملک میں مہنگائی دن بدن بڑھتی جارہی تھی یہ کچھ ایسے مسائل تھے جنہیں حل کرنے کے لیے تمام حکومتیں دعوے توکرتی تھیں لیکن عملی اقدامات نہ ہونے کے برابرتھے۔جس کی وجہ سے پاکستان کانام فنانشل ایکشن ٹاسک کی گرے لسٹ میں گیا۔اس عالمی ادارے کامقصد منی لانڈرنگ اورٹیررفنانسنگ کوروکناہے۔اس کے بعد پاکستان نے نیک نیتی سے بڑے پیمانے پراصلاحات متعارف کرائیں ۔ایف اے ٹی ایف کی جانب سے پاکستان کو27کام کرنےکاٹاسک دیاگیاپہلے سال پاکستان نے 14ٹاسک مکمل کیے اوردوسرے سال 13پرکام مکمل کیا۔جس کے بعد پاکستان بلیک لسٹ میں تونہیں جائےگاجبکہ اس کے گرے لسٹ سے نکلنے کے امکانات بھی پیداہوگئےہیں۔نئی اصلاحات سے معیشت میں ترقی ہوگی اوربیکنگ چینل کے علاوہ جوپاکستان میں رقوم آنےکاسلسلہ تھاوہ ان اصلاحات کے بعد تقریباً رک جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں