×

تمہارااللہ ناانصافی کرتاہے ،غیرمسلموں کاکیاقصورکہ وہ آگ میں جلیں،خوبصورت عورت کاکڑواسوال ،ڈاکٹرذاکرنائیک کے جواب نے خاتون کی بولتی بندکردی

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )ڈاکٹرذاکرنائیک سے اس خاتون نے سوال کیاکہ آپ اکثریہ کہتے ہیں اورقرآن بھی یہ کہتاہے کہ غیرمسلم جہنم میں جائیں گےانہیں آگ میں جلایاجائےگامگران غیرمسلموںکاکیاقصورہے جوپیداہی غیرمسلم کے گھرمیں ہوئےآپ اگرمسلمان کے گھرپیداہوگئے توآپ مسلمان ہیں اورآپ جنت میں جائیں گےمگرآپ ہی کاکوئی دوست جوغیرمسلم کے گھرپیداہواوہ جہنم میں جائے گاجب کہ اس کاکوئی قصوربھی نہیں اس کاکیاقصوراگراس کے والدین غیرمسلم تھےیہ تواللہ کی جانب سے برابری یاانصاف نہیں ہے۔اگرکسی کے والدین غیرمسلم ہیں تواس میں اس شخص کاکیاقصورہے ساراقصورتواس کےو الدین کاہے۔اسی طرح اگرآپ مسلمان ہیں تواس میں آپ کاکیاکمال ہے یہ توآپ کے والدین اوران کے والدین کی وجہ سے ہے جومسلمان تھے ۔اگراس میں ہماراقصورنہیں توہمیں آگ میںکیوں جلایاجائے گا۔اللہ تعالیٰ کوانصاف کرناچاہیے اورایسے غیرمسلموں کوجہنم میں نہیں ڈالناچاہیے ان کاکیاقصورہے۔ڈاکٹرذاکرنائیک نے کہاکہ بہن نے اچھاسوال کیا۔انہوں نے کہاکہ حضرت محمدؐ نے فرمایاکہ ہرانسان دین فطرکیساتھ پیداہوتاہےیعنی وہ مسلمان پیداہوتاہے ۔اس کے بعداس کے والدین اسے اپنے مذہب پرلگادیتے ہیں۔جب کوئی اسلام قبول کرتاہے توہم یہ نہیں کہتے کہ وہ کنورٹ ہوگیاہے بلکہ ہم یہ کہتے ہیں کہ اس نے غلط راستہ چھوڑ کرسیدھاراستہ اختیارکرلیاہے کیونکہ وہ پیداتومسلمان ہواتھا۔ڈاکٹرذاکرنائیک نے خاتون کے سوال کاجواب دیتے ہوئے کہاکہ اگرکوئی شخص کسی غیرمسلم کےگھرپیداہوتاہے اوراگرخدانخواستہ وہ بالغ ہونے سے پہلے مرجاتاہے تواس کاکوئی حساب کتاب نہیں ہوتا۔اوروہ سیدھاجنت میں جائے گابھلےہی وہ غیرمسلم گھرمیں پیداہواہو۔لیکن جب وہ بالغ ہوجاتاہے اس میں سمجھ بوجھ آجاتی ہے تووہ اپنے فعل کاخودذمہ دارہوتاہےاوراس کی یہ بھی ذمہ داری ہوتی ہے کہ وہ حقیقی مذہب کوتلاش کرےاوریہ ہم مسلمانوں کی ذمہ داری ہے کہ ہم حقیقی مذہب یعنی اسلام کواس تک پہنچائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں