×

آزاد فلسطینی ریاست کے قیام تک اسرائیل سے تعلقات قائم نہیں ہو سکتے،شاہ سلمان کاامریکی صدر کودوٹوک جواب

ریاض(Pلیٹیسٹ نیوز پاکستان)سعودی فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کاکہنا ہے کہ مشرق وسطیٰ میں امن کیلئے امریکی کوششیں لائق تحسین ہیں لیکن سعودی عرب مسئلہ فلسطین کا دیرپا اور پائیدار حل کاخواہشمند ہے۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق سعودی فرمانروا نے یہ بات گذشتہ روز امریکی صدر ٹرمپ سے ٹیلی فونک گفتگو

کرتے ہوئے کہی کہ سعودی عرب مسئلہ فلسطین کا شفاف حل چاہتا ہے۔

گفتگو میں متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے درمیان باہمی تعلقات کے معاہدے، مشرقِ وسطی کی صورتحال اور مسئلہ فلسطین پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

عرب میڈیا کے مطابق امریکی صدر سے گفتگو میں شاہ سلمان نے کہا کہ سعودی عرب امن کی کاوشوں کے لیے امریکی کوششوں کو سراہتا ہے۔

سعودی بادشاہ نے مزید کہا کہ سعودی عرب امن اقدامات کی بنیاد پر مسئلہ فلسطین کا شفاف اور مستقل حل چاہتا ہے۔خیال رہے کہ گزشتہ ماہ متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے درمیان باہمی تعلقات قائم کرنے کے لئے امن معاہدہ طے پایا تھا جس کے تحت اسرائیل مزید فلسطینی علاقے ضم نہیں کرے گا اور دو طرفہ تعلقات کے لیے دونوں ممالک مل کر روڈ میپ بنائیں گے۔

گزشتہ روز اسرائیل سے پہلی کمرشل پرواز سعودی عرب کی خصوصی اجازت کے بعد سعودی حدود سے ہوتے ہوئے امریکی اور اسرائیلی وفود کو لے کر ابوظبی پہنچی تھی اور یہ تاریخ میں پہلا موقع تھا کہ کسی اسرائیلی طیارے نے باقاعدہ طور پر سعودی فضائی حدود کا استعمال کیا۔

اس سے قبل سعودی عرب نے 2018میں بھارت کی ائیر لائن کو اسرائیل جانے کے لیے اپنی فضائی حدود استعمال کرنے کی اجازت دی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں