×

حضرت محمد ؐ کا بتایا ہوا قرض اُتارنے کا وظیفہ آپؐ نے فرمایا تم پر زمین بھر کا سونا بھی قرض ہو

حضرت معاذ ابن جبل رضی اللہ عنہما کہتے ہیں: ایک بار جب آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے ماتحت نماز جمعہ نہیں پڑھ سکتے تھے۔ * یہودیہ بن باریانامی نامی یہودی کے پاس میرے پاس سونے کا ایک تولیہ ہے۔ وہ میری دہلیز پر تھا اور مجھے ڈر تھا کہ وہ مجھے اس تک پہنچنے سے روک دے گا۔ وہ زیادہ دیر میرے دروازے کے باہر رہا اور جمعہ کی نماز میں شریک نہ ہوسکا۔ آپ نے فرمایا: اے معاذ! اللہ آپ کے قرض کی ادائیگی کی کچھ شکل بنائے۔ اس نے کہا ، “سور Surah آل ​​عمران نمبر چھبیس اور ستائیس پڑھیں۔” نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: اگر آپ سونے کے لئے پوری دنیا کے مقروض ہیں تو اللہ تعالی آپ کو اس کے بدلے میں ایک راستہ پیدا کردے گا۔ آپ اس وظیفے کی کوشش کریں ، یہ مفید ہوگا ، خدا چاہے۔ شکریہ شیئرنگ کیئرنگ ہے!

اپنا تبصرہ بھیجیں