×

سچا واقعہ لونگ کے دانے پر بسم اللہ اسطرح پڑھو اسکی ہر تمنا پوری ہوگی بے تحاشہ پیسہ نازل ہوگا

معاذ بن جبل رضی اللہ عنہ کے اختیار میں روایت ہے کہ انہوں نے کہا: میں نے نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم سے پوچھا کہ کون سا عمل وہ سب سے زیادہ پسند کرتا ہے؟ جو اللہ کو یاد کرتا ہے وہ مجاہد کی طرح ہے۔ الہی رحمت اس کے ساتھ ہے جب تک بندہ اللہ کو یاد کرتا رہے۔ عذاب الٰہی سے نجات کا کوئی عمل باقی نہیں رہا۔ ان لوگوں کے لئے جن Paradiseت جنت میں نعمت کی خوشخبری ہے جو خدا کا بہت ذکر کرتے ہیں۔ بہترین عمل اللہ کا ذکر ہے۔ اللہ تعالٰی اس کے تمام امور طے کرتا ہے جو اللہ کو یاد کرتا ہے۔ وہ اس پر اپنا رحم کرتا ہے۔ اپنا دوست بناتا ہے جو اللہ کو یاد کرتا ہے۔ اللہ اس کی ساری ضروریات پوری کرتا ہے ، ان کی مشکلات کو دور کرتا ہے ، رزق میں توسیع کرتا ہے ، اور سات نسلیں آباد ہوتی ہیں۔ اللہ تعالٰی نے ہم کو مسلمان پیدا کیا ہے۔ آئیے ہم ہر حالت میں اس کا شکر ادا کریں اور اپنی زندگیوں کو گزرنے دیں۔ اللہ رب العزت کی ایک یاد اللہ کے نام پر ہے ، جو اس وقت کے ولی رحمٰن ، رحیم ، شیخ عبد القادر جیلانی کا کہنا ہے کہ اگر میں تحریری بیان کرتا ہوں تو میں ایک ہزار کتابیں لکھ سکتا ہوں اور ہر کتاب کے پاس تین سو صفحات۔ بسم اللہ الرحمن الرحمٰن کے بارے میں ، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: مجھ پر ایسی آیت نازل ہوئی ہے۔ وہ جو سلیمان کے سوا کسی پر نازل نہیں ہوا تھا۔ حضرت جابر رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ جب یہ آیت نازل ہوئی ، بادل مشرق کی طرف بڑھے ، ہوائیں چلیں ، سمندر رک گیا ، جانوروں نے سن لیا اور شیطانوں پر آسمان سے شعلے گر گئے۔ رب العالمین ، اپنی عزت و وقار کی قسم کھا ، یا جو بھی میرا نام پکارا جائے گا ، برکت پائے گا۔ خدا کے نام پر ، گنہگار کا سبب بخشش ہوگا۔ کیا بات ہے کہ ایک دن مدرسے کے پاس سے گزرتے ہوئے تلاوت کونکی نے بسم اللہ الرحمن الرحمٰن کی تلاوت کی۔ اللہ تعالٰی کے نام کی مٹھاس نے اثر ڈالا۔ اس وقت میں نے کسی کو یہ کہتے سنا کہ ہم دونوں چیزوں کو اکٹھا نہیں کریں گے۔ ایک تو اللہ کے نام کی خوشنودی اور دوسرا موت کی تلخی۔ پھر موت کے بعد مجھے معلوم ہوا کہ اللہ رب العزت نے مجھے معاف کردیا۔ حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ کہتے ہیں: ایک بار ایک مسلمان کافر کے شیطان سے ملا۔ شیئرنگ کیئرنگ ہے!

اپنا تبصرہ بھیجیں