×

تعلیمی اداروں کی بندش کو جاری رکھنے کا فیصلہ مسترد، نجی تعلیمی اداروں نے حکومت کو بڑی دھمکی دیدی

اسلام آباد: صدر آل پاکستان پرائیویٹ اسکولز فیڈریشن کاشف مرزا نے کہا ہے کہ تعلیمی اداروں کو بند کرنے کے فیصلے کے خلاف اسلام آباد کی طرف لانگ مارچ کریں گے۔ تفصیلات کے مطابق نجی اسکولوں کی ایسوسی ایشن کے رہنما کاشف مرزا نے بتایا کہ نجی اسکولوں کے ایسوسی ایشن کے رہنما کاشف مرزا نے نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں 14٪ طلباء نیٹ تک رسائی حاصل کرتے ہیں۔ اسکولوں کی وجہ سے کورونا وائرس کی دوسری لہر نہیں پھیل سکی۔ کاشف مرزا نے یہ بھی کہا کہ یورپ میں ہر جگہ تعلیمی ادارے کھلے ہیں۔ ہم ملک میں تعلیمی اداروں کی بندش برقرار رکھنے کے فیصلے کو مسترد کردیں گے۔ اس سے قبل ایک بیان میں آل پاکستان پرائیویٹ اسکولز ایسوسی ایشن کے صدر کاشف مرزا نے کہا ہے کہ انہوں نے 24 نومبر سے 24 دسمبر تک فیڈریشن کی تجویز کو مسترد کردیا۔ انہوں نے کہا کہ آل پاکستان پرائیویٹ اسکولز فیڈریشن نے وزیر اعظم ، چیف جسٹس ، آرمی چیف سے اپیل کی ، چیف منسٹر اور گورنرز ایس او پیز کے تحت اسکولوں کو کھلا رکھیں۔ انہوں نے کہا کہ اسکول دوبارہ بند نہیں ہوں گے۔ اسکولوں کو کھلا رکھنے کا واضح اعلان کیا گیا ہے۔ تعلیمی اداروں کے لئے مائکرو لاک ڈاؤن کا آپشن استعمال کیا جانا چاہئے۔ کاشف مرزا نے کہا کہ سیاسی اجتماعات پر پابندی کا نفاذ کیا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ لاک ڈاؤن کی وجہ سے 50 ملین طلباء کے تعلیمی نقصان کی بحالی ناممکن ہے۔ 25 ملین پاکستانی بچے پہلے ہی اپنے آئینی حقوق سے محروم تھے۔ صدر آل پاکستان پرائیوٹ اسکولز فیڈریشن کاشف مرزا نے کہا ہے کہ تعلیمی اداروں کو بند کرنے کے فیصلے کے خلاف اسلام آباد کی طرف لانگ مارچ کریں گے۔ تعلیمی اداروں کی بندش جاری رکھنے کے فیصلے کو مسترد کردیا گیا ، نجی تعلیمی اداروں نے حکومت کو دھمکی دی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں