×

’’جھوٹ نہ بولا ، غصہ نہ کرو ‘‘

شہزادہ اپنے اساتذہ کو سبق سکھا رہا تھا .. اساتذہ نے اسے دو جملے پڑھائے۔ 1 “جھوٹ نہ بولیں..2” ناراض نہ ہوں..بعد کے بعد شہزادے سے ایک سبق پڑھانے کو کہا گیا۔ شہزادے نے جواب دیا کہ ابھی تک اسباق حفظ نہیں کیا گیا ہے۔ اگلے دن اساتذہ نے اسباق پڑھانے کو کہا .. شہزادہ نے پھر کہا کہ ابھی سبق حفظ نہیں ہوا ہے..تیسرا دن تعطیل تھا .. استاد نے کہا کہ کل چھٹی ہے لہذا لازمی سبق حفظ کریں کل لینا .. میں بعد میں کوئی عذر نہیں سنوں گا .. چھٹی کے اگلے دن ، طالب علم ایک خاص سبق پڑھانے میں ناکام رہا .. استاد ، یہ سوچے بغیر کہ طالب علم ایک ہے شہزادہ ، ناراض ہوا اور ایک طمانچہ موصول ہوا کہ یہ بھی کوئی ہے یہ اتنے دن سے دو جملے یاد نہ رکھنے کی بات ہے۔ ایک بار شہزادہ تھپڑ مارنے کے بعد گم ہو گیا۔ سبق یاد آگیا .. استاد بہت حیران ہوا کہ پہلے اسے سبق یاد نہیں تھا اور تھپڑ مارتے ہی اسے فورا immediately ہی سبق یاد آگیا .. شہزادہ التجا کرنے لگا کہ معزز استاد! آپ نے مجھے دو چیزیں سکھائیں۔ ۔1 …. جھوٹ مت بولیں..2 # ناراض نہ ہوں..میں نے اس دن جھوٹ بولنے سے توبہ کی تھی لیکن ناراض نہ ہوں _ یہ ایک مشکل کام تھا .. میں نے بہت کوشش کی مجھے سخت غصہ نہیں آتا تھا لیکن میں ناراض ہوتا تھا .. اب جب تک میں اپنے غصے پر قابو نہیں پاؤں گا ، تب میں یہ کیسے کہہ سکتا ہوں کہ مجھے سبق یاد آیا ہے؟ آج جب آپ نے مجھے تھپڑ مارا اور یہ تھپڑ بھی میری زندگی کا پہلا تھپڑ ہے ، اسی وقت میں نے اپنے دل و دماغ میں یہ بھی سوچا کہ مجھے غصہ آیا ہے یا نہیں .. جب میں نے غور کیا تو مجھے لگا کہ مجھے غصہ نہیں آیا ہے۔ آج میں نے دوسرا سبق سیکھا ہے جو آپ نے مجھے کہا ہے کہ غصہ نہ کریں .. آج اللہ کے فضل سے مجھے پورا سبق یاد آگیا !!! شیئرنگ کیئرنگ ہے!

اپنا تبصرہ بھیجیں